info@pvtc.gop.pk
+92 (42) 3520 9200

پی وی ٹی سی ایک نظر

تعارف

پنجاب ووکیشنل ٹریننگ کونسل(پی وی ٹی سی) اکتوبر 1998ء میں پرائیویٹ اور پبلک سکیٹر کے اشتراک کی بنیاد پر قائم کیا گیا ۔پی وی ٹی سی غریب بچے اور بچیوں کیلئے فنی تربیت کے مواقع ان کے گھر کے نزدیک ترین جگہ پر مہیا کرتی ہے۔ اس مقصد کیلئے پرائیویٹ سیکٹر کو شامل کیا گیا ہے تاکہ وہ ان بچوں کیلئے روزگار کا اہتمام کرسکے۔ اپنے ذاتی کاروبار کیلئے بلاسود اور چھوٹے قرضوں کے حصول کیلئے اخوت ،جذبہ فائونڈیشن اور کشف فائونڈیشن جیسیs NGOسے مدد لی جاتی ہے۔

پنجاب ووکیشنل ٹریننگ کونسل(پی وی ٹی سی)حکومت پنجاب کا ایک منفرد منصوبہ ہے جو زکوۃٰ فنڈز کو فنی تربیت اور معاشی خود انحصاری کے لئے استعمال کرتا ہے۔ پی وی ٹی سی دنیا میں سب سے پہلامنفردادارہ ہے جو زکوۃٰ فنڈز کو فنی تربیت کیلئے استعمال کرتے ہوئے ۔ غریب بچوں کو ہنر سکھانے اور ان کی بحالی کا م انجام دیتا ہے۔

انٹرنیشنل ادارے EEA، USAIDاورIYF کی کیس سٹڈی Case Study کے مطابق پی وی ٹی سی کی خدمات، غریب بچوں اور بچیوں کو ہنر سکھا کر جو کسی معاشی وجوہات کی بنا پر تعلیم حاصل نہیں کر پاتے، نہایت شاندار ہے۔

پی وی ٹی سی نیشنل اور انٹر نیشنل اداروں جن میں GIZ،PSDF،UNICEF، JICAاورBritish Council کے علاوہ دوسرے بہت سے ادارے شامل ہیں کے تعاون سے وطن عزیز میں غربت مٹانے میں اہم کردار ادا کررہا ہے۔

ُٰپی وی ٹی سی وزیراعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر(2015-2018)تک 480,000نوجوانوں کو فنی تربیت دے گا۔ پی وی ٹی سی نصاب کی تیاری کیلئے ہمیشہ نئے رجحان کو مدنظر رکھتا ہے۔ جو ہرتحصیل وضلع کی سطح پر (TNA) Training Need Assesmentکے سروے کے بعد تعین کیا جاتا ہے۔ پی وی ٹی سی نے اب تک 81 سے زائد نصاب انڈسٹری ، ایگریکلچر، صحت اور سروسز سیکٹر کی بڑھتی ہوئی ضروریات کو پورا کرنے کیلئے بنائے ہیں۔ ہر طالب علم کو فنی تربیت کے ساتھ ساتھ لائف سکلز(Life Skills) اور Entrepreneurship کی تعلیم و تربیت بھی دی جاتی ہے۔

پی وی ٹی سی نے 282انسٹی ٹیوٹس جو عام طورپر گورنمنٹ کی حالی یا کم استعمال ہونے والی عمارتوں میں قائم کئے جاتے ہیں، ان میں 89,000 طالب علموں کی فنی تربیت کی گنجائش ہے ۔ پی وی ٹی سی ہمیشہ لڑکیوں کی تعلیم کو بھی برابر کی اہمیت دیتی ہے اور اس طرح 50:50کی عورت اور مرد کے تناسب کو برقرار رکھتے ہیں ۔تقریباََ 700,000 طالب علم آج تک فنی تربیت حاصل کر چکے ہیں۔جس میں 74% نوکری حاصل کرچکے ہیں یا اپنا کاروبار کررہے ہیں۔

پاک فوج کے تعاون سے سوات میں بھی انسٹی ٹیوٹ قائم کیا گیا ہے۔ جو جنگی جنوں سے متاثر بچوں کو علم و ہنر سے آراستہ کر رہاہے۔پی وی ٹی سی نے ایک نہایت ہی شاندار (STTI) Staff and Teachers Training Institute قائم کیا ہے۔ جو اساتذہ کی نہ صرف Pedagogical Skillsبلکہ پیشہ ورانہ تربیت کا بھی اہتمام کرتا ہے ۔

پی وی ٹی سی نے اپنے وی ٹی آئیز (ووکیشنل ٹریننگ انسٹی ٹیوٹس) کو چلانے کیلئے خود مختار بورڈ بنا دئیے ہیں۔ جو عام طورپر ان اشخاص پر مشتمل ہیں جو بعد میں اپنے اداروں میں ملازمت دے سکیں۔

پی وی ٹی سی کو ایکٹ کے مطابق امتحان لینے، سرٹیفیکٹ/ڈپلومہ جاری کرنے کا اختیار حاصل ہے اور تمام طالب علموں کیلئے دو ماہ کی (OJT) لازمی ہے۔

خیراتی اداروں کے ساتھ اشتراک
پی وی ٹی سی اپنی سکہ بند صلاحیتوں جو اُسے فنی تعلیمی میدان میں حاصل ہیں کی وجہ سے ملکی اور بیرون ممالک اداروں کا اعتماد حاصل کرچکا ہے۔پچھلے چند سالوں میںپی وی ٹی سی بہت سے منصوبوں کو پائے تکمیل تک پہنچایا ہے۔ جو ملکی وغیر ملکی اداروں کے تعاون سے پایہ تکمیل تک پہنچے تھے۔ ان میں GIZ،UNICEF،Islamic Relief Fund،Swat NGO، Jazba Foundation،Akhuwat Foundation، Saboon، IOM، NAVTTC، JICA اورشامل ہے۔

اہم اعداد و شمار

تفصیل قیمت
فنی تعلیمی اداروں کی کل تعداد 282
کل ہنر 81
سالانہ پاس آؤٹ کی صلاحیت 89,000
آغاز کے بعد کل پاس آؤٹ 686,720
Employability of Traceable Pass-outs 74 %
صنفی تناسب ( F : M ) 1 : 1
Institute Advisory Boards (IABS) (Each Board Consist of 2 - 6 Persons) 134
فنی تعلیمی اداروں کے ملازمین کی تعداد 3,534
کل معلم عملہ 2,423
کل انتظامی عملہ 1,111
طلبہ اور کل عملہ کی شرح 12 - 1
طلبہ اور کل معلم عملہ کی شرح 17 : 1